بیگم کلثوم نواز کا جنازہ شام 5 بجے



News Desk

پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز کی میت لندن سے لاہور پہنچا دی گئی ہے جہاں ان کی آخری رسومات آج ہی جاتی امرا میں ادا کی جائیں گی۔ سابق خاتون اول بیگم کلثوم نواز کا طویل علالت کے بعد منگل کو لندن کے ایک نجی ہسپتال میں انتقال ہو گیا تھا۔

نواز شریف کے بھائی اور پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف جمعے کی صبح بیگم کلثوم نواز کی میت کے ہمراہ لاہور پہنچے جبکہ بیگم کلثوم نواز کے لندن میں مقیم بیٹے حسن اور حسین نواز اپنی والدہ کی میت کے ساتھ پاکستان نہیں آ رہے ہیں۔

کلثوم نواز کی میت کو پی آئی اے کی پرواز پی کے 758 کے ذریعے علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئر پورٹ پہنچایا گیا اور وہاں سے ایمبولینس کے ذریعے جاتی امرا کے لیے روانہ کیا گیا۔ بیگم کلثوم نواز کی نماز جنازہ اور تدفین شریف میڈیکل سٹی کمپلیکس، رائیونڈ جاتی امرا میں کی جائے گی۔اس سے قبل جمعرات کو لندن کے ریجنٹ پارک اسلامک سینٹر میں کلثوم نواز کی نماز جنازہ ادا کی گئی جس میں شہباز شریف، بیگم کلثوم نواز کے بیٹے حسن اور حسین نواز سمیت مسلم لیگ کے رہنماؤں، کارکنوں اور عوام کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

دوسری جانب نواز شریف، مریم نواز اور محمد صفدر کو کلثوم نواز کی آخری رسومات میں شرکت کے لیے منگل کی رات پیرول پر ابتدائی طور پر 12 گھنٹے کے لیے رہا کیا گیا تھا تاہم بدھ کو پیرول پر رہائی میں مزید تین دن کی توسیع کر دی گئی تھی۔آخری رسومات میں شریک ہونے کے لیے جاتی امرا میں مسلم لیگ نون کے رہنماؤں اور کارکنوں کی بڑی تعداد موجود ہے۔ بیگم کلثوم نواز تقریباً گذشتہ ایک سال سے لندن میں زیرِ علاج تھیں۔ انھیں پچھلے سال سرطان کے مرض کی تشخیص کی گئی تھی۔

ان کی عمر 68 سال تھی اور وہ برصغیر کے مشہور پہلوان رستمِ ہند گاما پہلوان کی نواسی تھیں جبکہ سنہ 1971 میں ان کی شادی نواز شریف سے ہوئی تھی۔ کلثوم نواز کے سوگوران میں ان کے شوہر نواز شریف، بیٹیاں مریم صفدر اور عاصمہ اور دو بیٹے حسن اور حسین نواز شامل ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *