لاہور میں ڈولفن فورس کی فائرنگ سے نیم پاگل شخص جاں بحق،ورثا کا احتجاج

News Desk

لاہور کے علاقے تھانہ سبزہ زار کی حدود میں نیم پاگل شخص عصمت اللہ کی جانب سے مبینہ طور پر خنجر کے وار سے شہریوں کو زخمی کیا جا رہا تھا۔

واقعہ کی اطلاع 15پر دی گئی جس پر ڈولفن اہلکار موقع پر پہنچ گئے اور عصمت اللہ کو گرفتار کرنے کی کوشش کی ۔تفصیلات کے مطابق تھانہ سبزہ زار کے علاقہ میں ڈولفن اہلکاروں کی فائرنگ سے مبینہ طور پر نیم پاگل شخص جاں بحق ہو گیا۔

ڈولفن پولیس کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے شخص نے ڈولفن اہلکار سمیت 5افراد کو چھریوں کے وار سے زخمی کیا جبکہ ایس پی اقبال ٹائون سید علی شاہ نے ابتدائی رپورٹ ڈی آئی جی آپریشنز کو پیش کر دی۔

ہلاک شخص کے اہل خانہ نے واقعہ کو پولیس گردی قرار دیتے ہوئے نعش کو بابو صابو انٹرچینج پر رکھ کر پولیس کیخلاف احتجاج اور نعرے بازی کی ۔تھانہ سبزہ زار کی حدود میں پیش آنے والے واقعہ کی اطلاع 15پر دی گئی جس پر ڈولفن اہلکار موقع پر پہنچ گئے اور عصمت اللہ کو گرفتار کرنے کی کوشش کی اسی دوران عصمت اللہ نے ڈولفن اہلکار مبشر کو بھی چھریوں کے وار کر کے زخمی کر دیا اور فرار ہو گیا۔واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی جبکہ متوفی کے اہل خانہ بھی موقع پر پہنچ گئے اور پولیس کے خلاف احتجاج شروع کر دیا۔

ایس پی اقبال ٹائون سید علی شاہ نے نواں کوٹ واقعہ کی ابتدائی رپورٹ ڈی آئی جی آپریشنز کو پیش کر دی۔ رپورٹ کے مطابق شہر ی عصمت اللہ کی جانب سے نیم پاگل شخص کا شہریوں کو چھریاں مارنے کی پولیس کو 15پر کال مو صول ہوئی جب ڈولفن سکواڈ سبزہ زار ٹیم نمبر115موقع پر پہنچی تو نیم پاگل شخص نے ڈولفن ٹیم پر حملہ کر دیا۔

عینی شاہدین کے مطابق نیم پاگل شخص نے حواس کھو نے کے بعد پانچ سے چھ شہریوں کو چھریاں مار کر زخمی کیا ڈولفن سکواڈکا اہلکار مبشر پیٹ میں چھر یاں لگنے سے زخمی ہوگیا۔مبشر کی کمر پر وار کئے گئے جن کا زخم دل تک گہرا ہے جس کو تشویشناک حالت میں ہسپتال منتقل کیا گیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے ڈولفن فورس کے اہلکار کی فائرنگ سے شہری کی ہلاکت کا نوٹس لے لیا اور آئی جی پنجاب کو واقعے کی تحقیقات کرکے رپورٹ پیش کرنے اور ذمہ داروں کا تعین کرکے قانونی کارروائی عمل میں لانے کی ہدایت کی ہے۔ دوسری جانب آئی جی پنجاب امجد جاوید سلیمی نے بھی واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے تفصیلی رپورٹ طلب کر لی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *