فلیگ شپ ریفرنس نیب کو نئی دستاویزات پیش کرنے کی اجازت‎



News Desk

احتساب عدالت نے فلیگ شپ ریفرنس میں نئی دستاویزات پیش کرنے کی نیب کی درخواست منظور کر لی۔ عدالت نے نیب کو نئی دستاویزات پیش کرنے کی اجازت دے دی۔

احتساب عدالت میں نواز شریف کے خلاف فلیگ شپ ریفرنس میں نیب کی جانب سے نئی دستاویزات پیش کرنے کی درخواست پر سماعت ہوئی۔ نیب نے عدالت سے آف شور کمپنیوں کے ملکیتی فلیٹس کی دستاویزات جمع کرانے کی استدعا کی، برطانیہ نے حسن نواز کی آف شور کمپنیوں اور پراپرٹیز کا ریکارڈ نیب کے حوالے کیا تھا۔ نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے اضافی دستاویزات ریکارڈ پر لانے کی مخالفت کی۔

احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے نیب کی جانب سے نئی دستاویزات پیش کرنے سے متعلق درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث کا اعتراض مسترد کرتے ہوئے نیب کی درخواست منظور کرلی۔

فاضل جج نے نیب کو نئی دستاویزات پیش کرنے کی اجازت دی، اس موقع پر نواز شریف کے وکلاء اور نیب پراسیکوٹر کے مابین تلخ کلامی اور جھگڑا بھی ہوا۔

عدالت نے ریمارکس دیے ان دستاویزات سے فلیگ شپ کے تفتیشی کا کیا تعلق ہے، یہ نیب نے نہیں بتایا، دستاویزات کے ساتھ تفتیشی افسر کا تعلق عدالت خود فرض نہیں کر سکتی، فاضل جج نے استفسار کیا 8 ماہ کی تاخیر سے کیوں یہ دستاویزات پیش کی جا رہی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *