اسلام آباد میں پہلی بار خواجہ سرا کو ڈرائیونگ لائسینس جاری کر دیا گیا



News Desk

پاکستان کے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد  میں پہلی بار ایک خواجہ سرا کو ڈرائیونگ لائسینس جاری کر دیا گیا ۔ لیلا علی نامی خواجہ سرا کو تمام تر عملی ڈرائیونگ ٹیسٹ پاس کرنے بعد اسلام آباد پولیس نے لائسینس جاری کیا ۔لیلا علی  پندرہ سال سے ڈرائیونگ کر رہی تھی لیکن دفتری رکاوٹوں کے باعث  ڈرائیونگ لائینس سے محروم تھی۔ ٹریفک  پولیس کی جانب سے لیلا کو آئی جی اسلام آباد عامر ذوالفقار کی خصوصی ہدایت پر ڈرائیونگ لائسنس جاری کیا گیا۔لیلا علی آواز شی میل فائونڈیشن کی صدر ہیں انہوں نے لائسنس کے لیے اسلام آباد ٹریفک پولیس سے رجوع کیا تھا۔

خواجہ سرا پاکستانی شہری ہیں ۔خیال رہے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے احکامات کے بعد علی لیلیٰ کو صنفی نشان ایکس والا قومی شناختی کارڈ بھی جاری کیا جا چکا ہے۔ ادارہ شماریات کے مطابق ملک میں خواجہ سراؤں کی تعداد 10 ہزار 418 ہے جو کل آبادی کا 0.005 فی صد بنتی ہے۔

لیکن جینڈر انٹریکٹو الائنس(جیا) کی بندیا رانا یہ تعداد تین لاکھ سے اوپر بتاتی ہیںشی میل حقوق کے لئے سرگرم چار تنظیموں کے بانی رہنماوں کے مطابق پاکستان میں خواجہ سرا افراد کی تعداد 5 لاکھ سے زائد ہے لیکن سیاست اور زندگی کے دیگر شعبوں میں ان کی نمائندگی نہ ہونے کے برابر ہے اور انہیں مخصوص شعبوں تک محدود کردیا گیا ہے، جس کے باعث برادری کے کئی افراد بھیک مانگ کر اور رقص کرکے گزر بسر کرنے پر مجبور ہیں۔گزشتہ روز لیلیٰ نےآئی جی اسلام آباد پولیس محمد عامر ذوالفقارسے ملاقات کی اور اپنے طبقے کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا،انہوں نےمسائل سننے کے بعد اپنےماتحت افسران کو ہدایت کی کہ آئندہ خواجہ سرا طبقے کے مسائل ترجیح بنیادوں پرحل کیے جائیں۔

ترجمان پولیس کے مطابق علی لیلیٰ کوخیرسگالی طورپراسلام آبادٹریفک پولیس دفتر بھجوایا گیاجہاں لائسنس کے حصول کے لیے تمام دستاویزی کارروائی اور ٹیسٹ کے بعد انہیں ڈرائیونگ لائسنس فراہم کیاگیا

ہے، جس کے باعث برادری کے کئی افراد بھیک مانگ کر اور رقص کرکے گزر بسر کرنے پر مجبور ہیں۔گزشتہ روز لیلیٰ نےآئی جی اسلام آباد پولیس محمد عامر ذوالفقارسے ملاقات کی اور اپنے طبقے کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا،انہوں نےمسائل سننے کے بعد اپنےماتحت افسران کو ہدایت کی کہ آئندہ خواجہ سرا طبقے کے مسائل ترجیح بنیادوں پرحل کیے جائیں۔ترجمان پولیس کے مطابق علی لیلیٰ کوخیرسگالی طورپراسلام آبادٹریفک پولیس دفتر بھجوایا گیاجہاں لائسنس کے حصول کے لیے تمام دستاویزی کارروائی اور ٹیسٹ کے بعد انہیں ڈرائیونگ لائسنس فراہم کیاگیا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *