وزیراعظم عمران خان کی صوبے کے بلدیاتی نظام کو فوری تبدیل کرنےکی ہدایت

News Desk

وزیر اعظم عمران خان نے وزیراعلی سیکرٹریٹ میں پنجاب کے مختلف محکموں کے سیکریٹریوں سے ملاقات اور صوبائی کابینہ کے اجلاس کی صدارت کی۔ ملاقات میں وزیر اعلی پنجاب عثمان خان بزدار بھی شریک تھے۔

ملاقات میں وزیراعظم نے ملک کو درپیش چیلنجز سے نمٹنے کیلئے بیوروکریسی کے کردار پر روشنی ڈالی۔وزیر اعظم عمران خان نے سیکریٹریوں سے کہا کہ موجودہ حالات میں انہیں مشکل فیصلے کرنا پڑیں گے۔
وزیراعظم کاکہناتھا کہ بیورو کریسی کسی بھی ملک کو چیلنجز سے نکالنے میں کلیدی کردار ادا کرتی ہےجبکہ موجودہ حالات میں ہماری بیورو کریسی کو دلجمعی سے کام کرنا ہوگا۔

وزیراعظم نے کہا کہ 60 کی دہائی میں سول سروس نے پروفیشنلزم کی مثال قائم کی تھی۔بیورو کریسی کو60 کی دہائی کی طرح بے لوث۔ پر عزم اور پیشہ ورانہ انداز سے کام کرنا ہوگا۔عمران خان نے کہا کہ بیورو کریسی میں بہتری لانے پر کے پی کے میں غیر معمولی نتائج سامنے آئے ہیں جبکہ گورننس۔ سروس ڈلیوری۔ شفافیت اور میرٹ کو ہر سطح پر یقینی بنایا جائے گا۔
انھوں نے صوبے کے بلدیاتی نظام کو فوری تبدیل کرنےکی ہدایت کی جبکہ ان کاکہناتھا کہ100 روزہ تبدیلی کےمنصوبےمیں کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائےگی۔

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت پنجاب کابینہ کے اجلاس میں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سمیت صوبائی وزراءنے شرکت کی۔

وزیراعظم عمران خان نے پنجاب میں پاکستان مسلم لیگ ن کےدور حکومت میں شروع کیے گئے اورنج لائن ٹرین سمیت جاری تمام ترقیاتی منصوبوں کا آڈٹ کرانےکاحکم دیا۔

عمران خان نے کہا کہ صاف پانی کی فراہمی،تعلیم، صحت میں تبدیلی چاہتےہیں جبکہ صفائی سمیت تمام شعبوں میں فوری تبدیلی نظرآنی چاہیے۔وزیراعظم نے صوبائی وزراءکو اپنی وزارتوں میں غیرضروری اخراجات ختم کرکےسادگی اپنانےکی ہدایت کی۔اس کےعلاوہ انھوں نے وزراء کومتنبہ کیا کہ کسی بھی وزیر کےساتھ پروٹوکول برداشت نہیں کیاجائےگا۔
واضح رہے آج وزیراعظم عمران خان نے 18رکنی اقتصادی ایڈوائزری کونسل کی تشکیل نو کردی ہےجس کانوٹیفکیشن بھی جاری کردیاگیا ہے۔
وزیراعظم کی جانب سے بنائی گئی ایڈوائزری کونسل میں 7 سرکاری اور11 نجی محکموں کے ماہرین اس  کا حصہ ہوں گے.

کونسل میں وزیرخزانہ، وزیرمنصوبہ بندی ، گورنر اسٹیٹ بینک،معروف تعلیمی اداروں اوربینکوں کے ماہرین بھی شامل کیے گئے ہیں۔

وزیراعظم کا وزراء کی بیوروکریسی کے معاملات میں مداخلت روکنے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور آئندہ ٹرانسفر پوسٹنگ میں کسی منسٹر کا نام نہ آنے کی وارننگ، ہر وزیر کو اپنی کارکردگی کی تفصیلات جمع کرانے کی ہدایت۔  وزیراعظم عمران خان نے اراکین اسمبلی اور وزراء کی بیوروکریسی میں مداخلت کو روکنے کا فیصلہ کیا ہے۔
وزیراعظم نے سخت سے ہدایت کی ہے کہ آئندہ ٹرانسفر پوسٹنگ میں کسی منسٹر کا نام نہ آئے۔ وزیراعظم نے ہر وزیر کو اپنی کارکردگی کی تفصیلات جمع کرانے کی ہدایت بھی کی ہے۔

اس موقع پر وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار نے سو روزہ کارکردگی پر بریفنگ دی۔ وزیراعظم نے پنجاب حکومت کو مہنگائی کم کرنے کیلئے پرائس کنٹرول کمیٹیاں قائم کرنے کی ہدایت دی ہے۔ جبکہ عمران خان نے تمام وزراء کو کسی کرپٹ افسر کی حمایت کرنے سے منع کر دیا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ہر وزیر دو صفحوں میں جو جو کام کیا وہ بتائے اور آگے کے پلان بارے بھی بتائے گا۔
وزیر اعظم نے ٹرانسفر پوسٹنگ پر بھی تحفظات کا اظہار کیا۔ وزیر اعظم نے واضح کہا کہ ٹرانسفر پوسٹنگ میں کسی منسٹر کا نام نہ آئے۔ بیوروکریسی کی ٹرانسفر پوسٹنگ کے معاملے سے تمام وزراء دور رہیں۔

واضح رہے کہ تحریک انصاف پنجاب اور وفاق میں حکومت بنانے سے بعد سے بیوکریسی کے تبادلوں کے معاملے کو لے کر مسلسل تنازعات کا شکار ہے۔ اسی باعث بیوروکریسی نے بھی حکومت کیساتھ تعاون نہ کرتے ہوئے سست روی سے کام کرنے کی پالیسی اختیار کر رکھی ہے۔اس لئے وزیراعظم نے اپنے وزراء کی بیوروکریسی کے معاملے میں مداخلت روکنے کا فیصلہ کرتے ہوئے ہدایت جاری کر دی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *