امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وزیر اعظم عمران خان سے مدد مانگ لی

News Desk

وزیراعظم عمران خان نے ٹی وی اینکرز کے ساتھ ملاقات کی ۔ملاقات کے دوران وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ کرتارپور راہداری گگلی نہیں ایک سیدھا سا فیصلہ ہے، ہم نے بھارت کا نفرت پھیلانے کا منصوبہ ناکام بنایا، میں نے کبھی اقربا پروری نہیں کی۔

ان کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ٹرمپ کا خط انہیں آج صبح ہی موصول ہوا ہے جس میں انہوں نے مسئلہ افغانستان کے حل میں کردار ادا کرنے کی درخواست کی ہے انہیں افغانستان میں پائیدار امن کے سلسلے میں کردار ادا کرنے کے لیے کہا گیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نےبتایا کہ امریکی صدرکی خواہش ہے کے پاکستان افغان طالبان کو مذاکرات کی میز پر لانے کے لیے اپنا کردار ادا کرے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اس سلسلے میں اپنا بھرپور کردار ادا کرے گا۔ماضی میں امریکاکے ساتھ معذرت خواہانہ موقف اختیار کیا گیا، ہم مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے پر عزم ہیں، افغانستان میں امن کے لئے ہر ممکن کردار ادا کریں گے۔اب ہم نے امریکا کو برابری کی بنیاد پر جواب دیا تو ٹرمپ نے خط لکھا، ہم پوری کوشش کریں گے کہ افغان مسئلے کا حل نکالنے کے لیے جو کردار ادا کرسکیں وہ کریں گے‘۔

اس سے قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی ٹویٹ میں پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی کرتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان پیسے لینے کے باوجود ہمارے لیے کام نہیں کرتا۔ اس کی واضح مثال اسامہ بن لادن کا کیس ہے۔ اپنے ٹویٹر پیغام میں امریکی صدر کا کہنا تھا کہ  پاکستان کے ہمارے لیے کام نہ کرنے کی ایک اور مثال افغانستان کا معاملہ بھی ہے۔

امریکی صدر کی ٹویٹس کے جواب میں وزیر اعظم عمران خان نے سخت ردعمل دیتے ہوئے کہا تھا کہ صدر ٹرمپ کو پاکستان سے متعلق ریکارڈ درست کرنے کی ضرورت ہے، دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستانی معیشت کو 123 ارب ڈالر کا نقصان اٹھانا پڑا جبکہ ملنے والی 20 ارب ڈالرکی امداد اس نقصان کے مقابلے میں نا ہونے کے برابر ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *