گورنر ہاؤس لاہور کی دیواریں گرانے اور جنگلے اتارنے کا عمل شروع



News Desk

وزیراعظم عمران خان کےحکم پر  گورنر ہاؤس لاہور کے گرد دیواریں گرانے کا عمل شروع کر دیا گیا ہے۔ الحمرا کے سامنے مال روڈ پر دیواریں گرانے اور جنگلے اتارنے کا عمل شروع ہو چکا ہے۔ گورنرہاوس دیوار مسمار کرکے حفاظتی جنگلا لگایا جائے گا۔

گورنر ہاوس سے  گورنر آفس ختم ہونے کی صورت میں اس عمارت کا چارج گورنر پنجاب کے پاس رہے گا، اگر گورنر ہاؤس سے گورنر آفس کو ختم کیا جاتا ہے تو پھر ایوان وزیراعلیٰ کی عمارت کو اس مقصد کے لئے استعمال کیا جا سکتا ہے، تمام آپشنز پر ابھی بحث چل رہی ہے، حتمی فیصلہ وزیراعظم عمران خان کریں گے۔

گورنر پنجاب چوہدری سرور نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی حکومت نے اپنا ایک وعدہ پورا کردیا،گورنر ہاؤس کے نئے استعمال کے متعلق حتمی فیصلہ وزیراعظم ہی کریں گے۔گورنر پنجاب چودھری محمد سرور کا کہنا ہے کہ گورنر ہاؤس کو آرٹ گیلری، عجائب گھر اور بوٹینیکل گارڈن بنانے کی تجاویز سامنے آچکی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ایک پلان اور حکمت عملی کے تحت گورنر ہاؤس کی دیواریں گرائی جائیں گی اور دیوار کی جگہ حفاظتی جنگلہ لگایا جائے گا، گورنر ہاؤس کی عمارت گرانے کا تاثرغلط ہے۔

دوسری جانب گورنر ہاؤس لاہورکی دیواریں گرانے کے خلاف مذمتی قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع کرادی گئی، قرارداد میں کہا گیا ہے کہ حکومت مہنگائی اور بےروزگاری سے توجہ ہٹانے کیلئے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر رہی ہے، دیواریں گرا کر جنگلا لگانے سے ڈالر کی اڑان کنٹرول نہیں کی جاسکتی۔

پنجاب اسمبلی میں یہ قرارداد مسلم لیگ ن کی رکن حنا پرویز بٹ کی جانب سےجمع کرائی گئی، قرارداد میں کہا گیا ہے کہ گورنر ہاؤس پنجاب میں وفاق کی علامت ہے، اس کی دیواریں گرانا انتہائی غیر ذمےدارانہ فیصلہ ہے۔حکومت کو غریبوں کی ایک ہزار سےزائد دکانیں گرا کر تسلی نہیں ملی، گورنرہاؤس جیسی تاریخی عمارتیں قوم کا اثاثہ ہیں، ان کے ساتھ ایسا سلوک برداشت نہیں کیا جائے گورنر ہاوس کی دیواریں گرانے کا کام بند کیا جائے 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *