پچھلی حکومتوں کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے ایکسپورٹ نہیں بڑھی

News Desk

اسلام آباد میں فیڈریشن آف پاکستان چیمپبر آف کامرس انڈسٹری (ایف پی سی سی آئی) کی تقریب سے خطاب میں عمران خان کا کہنا تھا کہ معیشت کے استحکام سے ملک ترقی کرتا ہے تاجروں کو سہولیات دینے کیلئے کام کر رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی برآمدات 24 ارب ڈالرز کے قریب ہیں۔ہمیں اپنے ذہنوں کو تبدیل کرنے کی ضرورت ہے کیوں کہ ملک میں سرمایہ کاری اور تجارت سے خوشحالی آئے گی۔

انہوں نے کہا کہ میرا کوئی بزنس ہے نہ ہی کوئی انڈسٹری لیکن کاروباری طبقے اور برآمدکنندگان کی ہر ممکن مدد کریں گے اور تجارتی خسارے کو کم کرنے کیلئے دن رات محنت کر رہے ہیں۔کامیابی کا راز ہے کہ غلطیوں سے سیکھا جائے اور پاکستان میں اب تک جو غلطیاں ہوئیں اسے ٹھیک کرنا چاہتے ہیں۔ چھوٹی اور درمیانے درجے کی صنعتوں کو بہتر بنانا ہے جب کہ ماضی میں برآمدات اور تجارت کیلئے سوچا ہی نہیں گیا۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پچھلی حکومتوں کی پالیسیوں کی وجہ سے پاکستان کی ایکسپورٹ نہیں بڑھ سکی۔ایکسپورٹ بڑھانا ہوگی کوئی نہ کوئی غلطی کی تبھی ہم یہاں کھڑے ہیں۔ غلطی ہمارے مائنڈ سیٹ کی ہے ہمیں مائنڈ سیٹ تبدیل کرنا چاہئے ہم نے ماضی میں ایکسپورٹ پر توجہ ہی نہیں دی۔

انہوں نے کہا کہ پچھلی حکومتوں کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے ایکسپورٹ نہیں بڑھی۔ بڑا تجارتی خسارہ ورثے میں ملا جسے کم کرنے کیلئے دن رات محنت کررہے ہیں ہم نے تاجروں اور صنعتکاروں کی مدد کرنی ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان کی برآمدات 24 ارب ڈٓالرز جبکہ ملائیشیا کی 200 ارب ڈالر ہیں پاکستان میں تجارت کے لئے مشکل ماحول رہا ہے  چھوٹے اور درمیانے درجے کی صنعتوں کو بہتر کرنا ہے ملک میں سرمایہ کاری اور تجارت سے خوشحالی آئے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *