احتساب عدالت کاسابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف فلیگ شپ اور العزیزیہ ریفرنسز پرفیصلہ محفوظ ‎

News Desk

احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف فلیگ شپ اور العزیزیہ ریفرنسز پر فریقین وکلا کے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلے محفوظ کرلیے جنہیں 24 دسمبر کو سنایا جائے گا۔

احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے سابق وزیراعظم کے خلاف ریفرنسز کی سماعت کی جس کے دوران فریقین کی جانب سے ریفرنسز کے قانونی نکات پر دلائل دیے گئے۔

سابق وزیراعظم کی جانب سے ایک ہفتے کی مہلت کی درخواست کی گئی جسے نیب کے اعتراض کے بعد عدالت نے مسترد کرتے ہوئے دونوں ریفرنسز پر فیصلے محفوظ کرلیے اور اعلان کیا کہ 24 دسمبر کو فیصلہ سنایا جائے گا۔

احتساب عدالت کی جانب سے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ پہلے ہی سنایا جاچکا ہے جس میں نواز شریف کو 10 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی جسے بعدازاں اسلام آباد ہائیکورٹ نے معطل کیا۔

یاد رہے کہ نیب پراسیکیوٹر اصغر اعوان نے گزشتہ روز اپنے حتمی دلائل مکمل کیے اس سے قبل نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے پیر کے روز اپنے حتمی دلائل مکمل کیے تھے۔

احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے تینوں ریفرنسز کی سماعت کی حسین اور حسین نواز کی مسلسل غیر حاضری پر ان کا کیس الگ کیا گیا اور 6 جولائی 2018 کو ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ سناتے ہوئے نواز شریف کو 11 مریم نواز کو 7 اور کیپٹن (ر) صفدر کو ایک سال قید و جرمانے کی سزا سنائی۔

شریف خاندان نے جج محمد بشیر پر اعتراض کیا جس کے بعد دیگر دو ریفرنسز العزیریہ اور فلیگ شپ انویسٹمنٹ ریفرنس کی سماعت جج ارشد ملک کو سونپی گئی تھی۔
احتساب عدالت نے نواز شریف کے خلاف دائر العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز کا ٹرائل مکمل ہونے کے بعد دونوں ریفرنسز پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔ فیصلہ 24 دسمبر کو سنایا جائے گا۔

العزیزیہ ریفرنس میں 22 اور فلیگ شپ میں 16 گواہان پیش ہوئے۔ دونوں ریفرنسز پر 15 ماہ تک کارروائی ہوئی۔ جب کہ دونوں ریفرنسز پر کُل 183 سماعتیں ہوئیں۔ اس دوران نواز شریف 130 بار عدالت میں پیش ہوئے۔ جب کہ پندرہ بار نواز شریف جیل سے پیش ہوئے۔ احتساب عدالت کے جج جسٹس ارشد ملک نے ریفرنسز پر80 سماعتیں کیں۔ ریفرنسز پر پہلی 103 سماعتیں جج محمد بشیر نے کی تھیں۔
واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں احتساب عدالت کو فلیگ شپ اور العزیزیہ ریفرنس کا فیصلہ 24 دسمبر تک سنانا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *