نواز شریف کیخلاف العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرینسز کا فیصلہ کل سنایا جائے گا

News Desk

سابق وزیر اعظم اور مسلم لیگ ن کے قائدمیاں  نوازشریف کے خلاف العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ ریفرنس کا محفوظ فیصلہ کل سنایا جائے گا۔نوازشریف کے خلاف العزیزیہ اورفلیگ شپ ریفرنسز کا فیصلہ احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کل سنائیں گے۔ مسلم لیگ ن نے کل کے فیصلے  کی منصوبہ بندی کی ہے۔ پارٹی کی تیار کر دہ حکمت عملی کے تحت نوازشریف احتساب عدالت میں ہی فیصلہ سنیں گے اور ن لیگ کے سینئر رہنما بھی ان کے ہمراہ ہوں گے۔

عدالتی عملے کی بھی ہفتہ وار چھٹیاں منسوخ کردی گئی ہیں جب کہ فاضل جج بھی ہفتہ اور اتوار کو عدالت پہنچے ہیں۔ سپریم کورٹ کے حکم کے مطابق احتساب عدالت 24 دسمبر کو العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز کا فیصلہ سنائے گی۔ نوازشریف احتساب عدالت میں ہی فیصلہ سنیں گے، ارکان پارلیمنٹ اور کارکنوں کو احتساب عدالت پہنچنے کی ہدایت دے دی گئی۔ احتساب عدالت نے 18 دسمبر کو فیصلہ محفوظ کیا تھا۔خواجہ حارث کے معاون وکلا نے جمعہ کے روز یو کے لینڈ رجسٹری سے متعلق دستاویزات  احتساب عدالت میں جمع کروا دیے ہیں جوکہ حسن نواز، کی فروخت شدہ پراپرٹی سے متعلقہ ہیں۔

سابق وزیراعظم نوازشریف نے احتساب عدالت سے استدعا کی تھی کہ نیب کی جانب سے دائر ریفرنسز کا فیصلہ 24 کے بجائے 26 دسمبر کو سنایا جائے جسے مسترد کردیا گیا تھا۔ فاضل جج نے ریمارکس دیے تھے کہ پوری کوشش ہوگی کہ فیصلہ مقرر تاریخ کو ہی سنا دیا جائے۔پارٹی کی اعلیٰ قیادت نے ن لیگ کے رہنماؤں کو آج اسلام آباد پہنچنے کا حکم دے دیا ہے، مقامی قیادت اور بلدیاتی نمائندوں کو کارکن ساتھ لانے کی ہدایت ہے جس کے لئے طارق فضل چودھری، انجم عقیل کو ذمہ داری سونپ دی گئی۔

چودھری تنویر، ملک ابرار اور دیگر رہنما راولپنڈی سے کارکنوں کولائیں گے۔ العزیزیہ ریفرنس میں 22 اور فلیگ شپ ریفرنس میں 16 گواہان کے بیانات قلمبند کیے گئے۔احتساب عدالت نمبر ایک اور دو میں سابق وزیراعظم کے خلاف نیب ریفرنسز کی مجموعی طور پر 183 سماعتیں ہوئیں۔نوازشریف مجموعی طور پر 130 بار احتساب عدالت کے روبرو پیش ہوئے، وہ 70 بار جج محمد بشیر اور 60 مرتبہ محمد ارشد ملک کی عدالت میں پیش ہوئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *