سابق وزیر اعظم نواز شریف اڈیالہ جیل سے کوٹ لکھپت جیل منتقل

News Desk

العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں سزا یافتہ سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کو خصوصی اسکواڈ کی نگرانی میں اڈیالہ جیل راولپندی سے بینظیر ائیرپورٹ روانہ کیا گیا جہاں سے انہیں خصوصی طیارے براوو350 کے ذریعے لاہور پہنچایا۔ جہاں سے سخت سیکیورٹی میں کوٹ لکھپت جیل منتقل کیا گیا۔نواز شریف کو قومی احتساب بیورو (نیب) کی ٹیم لاہور لے کر پہنچی۔

نواز شریف کو کوٹ لکھپت جیل منتقلی کے دوران سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے جبکہ جیل کے باہر اور اندر بھی پولیس کی بھاری نفری تعینات تھی۔اس  سے قبل نواز شریف نے سزا کی پہلی رات اڈیالہ میں گزاری، انہوں نے آج صبح کا آغاز فجر کی نماز سے کیا اور ناشتے میں چائے کے ساتھ رس کھائے۔سابق وزیر اعظم کی 69سالگرہ کے موقع پر اڈیالہ جیل انتظامیہ نے نوازشریف کو سالگرہ کی مبارکباد بھی دی۔ لیگی کارکنان نے جیل کے باہر ان کی سالگرہ کا کیک کاٹا اور انہیں مبارکبار دی۔

احتساب عدالت کے فیصلے کے بعد سابق وزیراعظم نے عدالت سے درخواست کی تھی کہ انہیں اڈیالہ جیل کے بجائے کوٹ لکھپت بھیجنے کے احکامات جاری کیے جائیں جس پر معزز جج نے ان کی درخواست منظور کرلی تھی۔یاد رہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کو گزشتہ روز محفوظ فیصلے پر العزیزیہ ریفرنس میں سات سال قید  اور جرمانے کی سزا سنائی گئی تھی جبکہ فلیگ شپ ریفرنس میں بری کردیا گیا تھا۔سابق وزیراعظم پر العزیزیہ ریفرنس میں قید کے علاوہ  تقریباََ ایک ارب 50 کروڑ روپے کا جرمانہ اور جائیداد کو بھی ضبط کرنے کا حکم دیا گیا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *