وزیر اعظم کے حلقہ میں سیاحت کے فروغ کے لیے بنایا گیا منصوبہ ختم،ملازمین نوکریوں سے فارغ

News Desk

سابق وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کے دور میں ان لینڈ واٹر ٹرانسپورٹ ڈویلپمنٹ کمپنی کا منصوبہ ختم کر کے ملازمین کو نوکری سے برخواست کرنے کے نوٹسسز جاری کر دئیے گئے ۔نوکری سے برخواست کرنے والے ملازمین کو 31 جنوری تک کی مہلت دے دی گئی ۔

شہباز شریف کے دور میں دریاے سندھ پر تجارتی اور سیاحتی نقطہ نظر سے ایک ارب روپے کی لاگت سے منصوبہ شروع کیا گیا جس پہ 5 کروڑ روپے کی لاگت سے بحری جہاز،دوکروڑ روپے کی فیری بوٹ اور دیگر بوٹس خریدی گئیں مگر 23 مارچ 2018کو اس کے افتتاح کے تین ماہ بعد مئی میں شہباز شریف نے اپنی وزارت اعلی کے آخری روز اس منصوبے کو ختم کر دیا اور یہ منصوبہ ان 56 کمپنیوں میں شامل تھا جو شہباز شریف نے بنائی تھیں ۔

ان لینڈ واٹر ٹرانسپورٹ ڈویلپمنٹ کمپنی کے اہلکار نے بتایا کہ پاک فوج کے حاضر سروس بریگیڈیر نے گرین پاکستان میگزین میں بھی اس منصوبے کو سراہا ہےسڑک ،ریل اوردیگر ذراءع آمدرفت کی نسبت بہتر قرار دیا۔وزیراعظم پاکستان عمران خان کے حلقہ میں اس منصوبے کو ختم کرنے اور ملازمین کو نوکریوں سے نکالنے کے خلاف کمپنی ملازمین نے احتجاج کیا اور وزیر اعظم سے اپیل کی ہے کہ وہ ملک میں سیاحت کے فروغ کے لیے اس منصوبے کو ختم ہونے سے روکیں تا کہ ملازمین کا مستقبل تاریک نہ ہو اور ملک اور بیرون ملک سے آنے والے سیاح بھی اس منصوبہ سے مستفید ہو سکیں ۔

ملازمین کا کہنا تھا کہ ان لینڈ واٹر ڈیویلپمنٹ ٹرانسپورٹ  کمپنی کو محکمہ آبپاشی کے حوالے کرنے کی بجائے اسے ٹورازم کے محکمہ کے حوالے کیا جائے اس منصوبے کے تین کلو میٹر کے ساتھ سی پیک بن رہا ہے جس سے اندرون اور بیرون ملک آنے والے سیاح بھی لطف اندوز ہو سکیں گے اور پاکستان کا بہتر امیج دنیا میں جاے گا۔ایک ارب سے زائد کے اس منصوبہ کو بچایا جائے تا کہ کروڑوں روپے کی لاگت سے بنائی گئی بلڈنگ ، بحری  ، جہاز اور فیری زنگ آلود نہ ہو سکیں اور پاکستان میں سیاحت کو فروغ حاصل ہو  ..

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *