متحدہ عرب امارات کے ولی عہد شیخ محمد بن زید النہیان کی پاکستان آمد‎

News Desk

وزیراعظم عمران کی دعوت پر ابوظہبی کے ولی عہد  پاکستان پہنچ گئے ہیں۔ ائیرپورٹ پر معزز مہمان کا پرتپاک استقبال کیا گیا۔ 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔وزیراعظم عمران خان نے معزز مہمان کی گاڑی خود ڈرائیو کی اور انہیں وزیراعظم ہاوس لے جایا گیا جہاں دونوں رہنماوں کے درمیان ون آن ون ملاقات ہو گی۔ بعد ازاں وفود کی سطح پر بھی مذاکرات ہوں گے۔تین ماہ میں پاکستان اور متحدہ عرب امارات کی قیادت کے درمیان یہ تیسری ملاقات ہو گی۔

وزیراعظم ہاؤس پہنچنے پر معزز مہمان کو گارڈ آف آنر پیش کیا گیا۔ پہلے متحدہ عرب امارات پھر پاکستانی قومی ترانے دھنیں بجائی گئیں جب کہ معزز مہمان کو فوج کے چاق و چوبند دستے نے سلامی دی اور ولی عہد نے گارڈ آف آنر کا معائنہ بھی کیا۔
وزیراعظم عمران خان نےمہمان کا کابینہ ارکان اور دیگر سے تعارف کرایا جب کہ ولی عہد متحدہ عرب امارات نے  بھی اپنے وفد کے ارکان سے وزیراعظم کا تعارف کرایا۔
متحدہ عرب امارات کے ولی عہد کی پاکستان آمد کے موقع پر اسلام آباد کو پاکستانی اور یو اے ای کے پرچموں سے سجایا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق 3 سال میں پاکستان کو لگ بھگ ساڑھے 9 ارب ڈالر کا ادھار تیل۔ 3 ارب ڈالر کا آسان شرائط پر قرضہ اور 3 ارب ڈالر اسٹیٹ بینک میں رکھوائے جائیں گے جبکہ مختلف شعبوں میں ہونے والی سرمایہ کاری اس کےعلاوہ ہے۔

ابتدائی طور پر تیل کی فراہمی کیلئے 1 سال کا معاہدہ ہوگا۔ بعد میں دوسال کی مزید توسیع ہوگی امارات پاکستان کو 3 ارب ڈالر کا آسان شرائط پر قرض بھی فراہم کرے گا۔یواے ای کی طرف سے 3 ارب ڈالر کے قرض کی منتقلی کا طریقہ کارطے ہونا باقی ہے۔

امارات سے مختلف شعبوں میں ہونے والی سرمایہ کاری اس کے علاوہ ہوگی۔ متحدہ عرب امارات کو جنوری کے پہلے ہفتے میں تین ارب ڈالر پاکستان کے اکاؤنٹ میں منتقل کرنا تھے۔ جس میں تاخیر ہوئی تاہم اب ولی عہد کے دورہ پاکستان میں اس رقم کی منتقلی کا اعلان ہوگا۔

امارات کے ولی عہد کا دورہ ایک روزہ ہو گا اور وہ اس ایک روزہ دورے کے دوران چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ اور اعلیٰ سیاسی قیادت سے اہم ملاقاتیں کریں گے۔

متحدہ عرب امارات کے ولی عہد کا یہ 12 سال بعد پاکستان کا دورہ ہے اور تحریک انصاف کی حکومت میں پاکستان اور امارات کی اعلیٰ قیادت کے درمیان 3 ماہ میں ہونے والی یہ تیسری ملاقات ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *