سابق گورنر سندھ محمد زبیرکومسلح کارسواروں کی روکنے کی کوشش

News Desk

سابق گورنر سندھ اور ن لیگ کے رہنما محمد زبیر پر نامعلوم مسلح افراد کی جانب سے حملے کی کوشش کی گئی تاہم لیگی رہنما تیزرفتاری سے گاڑی بھگا کر بچ نکلنے میں کامیاب ہوگئے۔

محمد زبیر پر حملے کے واقعے کی ایف آئی آر تاحال رجسٹر نہیں کی جا سکی۔ذرائع کے مطابق نامعلوم مسلح افراد نے محمد زبيرکوڈيفنس کے علاقے ميں روکا، سابق گورنر سندھ اپنی اہليہ کے ساتھ گھر جارہے تھے۔

لیگی رہنما محمد زبيرنے واقعے کی اطلاع اعلیٰ حکام کو دی لیکن تاحال کوئی ایکشن نہیں لیا گیا۔ کراچی پولیس کا کوئی اعلیٰ افسر محمد زبیر کے گھر نہیں پہنچا۔ہ محمد زبیرکاکہناتھاکہ وہ خیریت سے ہیں اورکوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا۔

انہوں نے بتایاکہ کارمیں سوارملزمان نےاپنی گاڑی میری کارکےساتھ لگائی اوراسلحہ نکال کرمیری طرف کیاتومیں نےگاڑی بھگادیانہوں نے کہاکہ جب آپ کےپاس پبلک عہدہ ہوتاہےتودھمکیاں ملتی رہتی ہیں،میں دہشت گردوں کےخلاف کھل کربولتاہوںمجھے کچھ دن سےدھمکیاں مل رہی تھیں لیکن نہ تو میں نےسیکیورٹی مانگی اورنہ ہی مجھےدی گئی ۔

دوسری جانب تحریک انصاف کے رہنما حلیم عادل شیخ نے سابق گورنر سندھ محمد زبیر پر حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ سندھ حکومت افسوسناک واقعے پر مکمل و جامع تحقیات کرے۔ان کا کہنا تھا کہ محمد زبیر اور ان کے اہل خانہ پر حملہ بزدلانہ کارروائی ہے، پولیس کو بے اختیار کرنے والے امن دشمن بن چکے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ دہشتگردی کی حالیہ لہر ایک سوچی سمجھی سازش ہے، سندھ حکومت واقعے کے ملزمان کو فوری کیفر کردار تک پہنچائے۔واضح رہے کہ گزشتہ ماہ 25 دسمبر کو متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کے سابق رکن اور سابق رکن قومی اسمبلی علی رضا عابدی کو بھی کراچی کے علاقے ڈیفینس خیابان غازی میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے قتل کر دیا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *