افغانستان میں ریڈیو اسٹیشن میں دو صحافی قتل

نیوز ڈیسک

افغانستان میں مزید دو صحافیوں کو قتل کردیا گیا۔افغان ذرائع کے مطابق دونوں صحافیوں کو افغانستان کے شمالی صوبے  تخار میں ان کے دفتر کے اندر نشانہ بنایا گیا۔ نامعلوم مسلح افراد نے صحافی رحیم اللہ رحمانی اور شفیق آریا کو فائرنگ کرکے ہلاک کیا اور فرار ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق کہ مسلح افراد نجی ریڈیو ’ہم صدا‘ میں داخل ہوئے اور 20 سالہ ہم عمر نوجوانوں پر فائرنگ کردی۔دو نامعلوم مسلح افراد ریڈیو اسٹیشن کے دفتر میں داخلے ہوئے اور دو رپورٹرز پر فائرنگ کردی جو لائیو پروگرام کررہے تھے تاہم دنوں رپورٹرز موقع پر ہی جاں بحق ہو گئے۔واضح رہے کہ افغانستان میں رواں برس صحافیوں پر حملے کا دوسرا واقعہ ہے۔افغان ذرائع نے مزید بتایا کہ واقعہ گزشتہ شب پیش آیا۔ دونوں افراد ریڈیو اسٹوڈیو کے ملازم تھے۔

ابھی تک حملے کی ذمےداری کسی نے قبول نہیں کی۔پولیس کا کہنا ہے کہ معاملے کی تحقیقات جاری ہیں تاہم ابھی حتمی طور پر کچھ نہیں کہا جاسکتا۔ پولیس حکام کا کہنا ہے کہ دونوں افراد موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے تھے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ دونو ں صحافیوں کو دفتر کے اندر شو کے دوران مارا گیا۔واضح رہے 2019 کے پہلے پانچ ہفتوں میں اب تک افغانستان میں تین صحافیوں کو قتل کیا جاچکا ہے۔ رواں برس ہی پانچ جنوری کو بھی ایک صحافی جاوید نوری کو قتل کردیا گیا تھا۔

یہ واقعہ افغان صوبے فراح میں پیش آیا تھا تاہم اس کی ذمےداری شدت پسندوں نے قبول کرلی تھی۔کابل میں امریکی سفیر جان باس نے ’صحافیوں کے قتل پر افسوس اور گہرے رنج کا اظہار کیا‘۔ایمنسٹی انٹرنیشنل نے واقعے کو ’سنگین جرم‘ قرار دیا اور افغان حکام پر زور دیا کہ وہ صحافیوں کے تحفظ کو یقینی بنایں تاکہ بہتر انداز میں فرائض انجام دے سکیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *