مودی سرکار کےغنڈوں کا مسلمان خاندان پر تشدد, گھر چھوڑنے پر مجبور کر دیا‎

نیوز ڈیسک

بھارت میں مسلم خواتین کی عزتیں محفوظ نہ مردوں کی زندگیاں. گڑگاوں میں آر ایس ایس اور بی جے پی کے 40 سے زائد غنڈوں نے مسلمان خاندان کے گھر پر حملہ کر دیا۔ تشدد سے زخمی کئی افراد کی حالت تشویشناک ہو گئی متاثرہ خاندان علاقہ چھوڑنے پر مجبور ہو گیا۔

مودی سرکار کے غنڈوں نے بھارت میں مسلمانوں کا جینا حرام کر دیا۔ گڑگاوں میں تشدد کا نشانہ بننے والا مسلمان خاندان گھر چھوڑنے پر مجبور ہو گیا۔

اپوزیشن جماعتوں نے مسلمان خاندان پر تشدد کےواقعے پر سخت ردعمل کا اظہار کیا ہے۔کانگریس رہنما راہول گاندھی نے ٹویٹ کی کہ انتہا پسند بی جے پی سیاسی قوت حاصل کرنے کیلئے نفرت اور تعصب پھیلا رہی ہے۔ 

اروند کیجریوال بھی برس پڑے اور کہا کہ مودی ہٹلر کے نقش قدم پر چل پڑے ہیں۔ 
وآضح رہے کہ نئی دہلی کے علاقہ گڑگاوں میں ہولی کے دن کرکٹ کھیلنے پر مسلمان خاندان پر بدترین تشدد کیا گیا۔

40 انتہا پسندوں نے مسلمان خاندان پر دھاوا بولتے ہوئے انہیں ڈنڈوں لوہے کی راڈز ہاکی اور پائپوں سے مارا اور پاکستان چلے جانے کی دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ ہولی پر کرکٹ کھیلناہے تو پاکستان جاو۔

سوشل میڈیا پر بھارتی شہریوں نے مودی سرکار کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے سوال کیا ہے کہ کیا یہی ہے مودی سرکار کے بھارت کا اصل چہرہ؟ بھارتی میڈیا کے مطابق انتہاپسندوں نے گلی میں کرکٹ کھیلنے پر تکرار پر گھر میں گھس کر توڑ پھوڑ کی۔

اہل خانہ کو تشدد کا نشانہ بنایا۔ لاٹھیوں ہاکیوں لوہے کے ڈنڈوں اور پائپوں سے مارا۔ تشدد سے اہل خانہ میں سے ایک شخص بے ہوش ہو گیا۔ اہل خانہ کا کہنا ہے کہ پولیس کو بار بار اطلاع دی لیکن بروقت کارروائی نہیں کی گئی۔

مسلمان شہری محمد ساجد کا کہنا ہے کہ کچھ لوگ ان سے زبردستی مکان خالی کروانا چاہتے تھے تاکہ وہ خالی گھر پر قابض ہو جائیں۔ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد پولیس ایکشن لینے پر مجبور ہوئی اور ایف آئی آر درج کرکے 6 حملہ آوروں کو گرفتار کر لیا۔

اور پاکستان چلے جانے کی دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ ہولی پر کرکٹ کھیلناہے تو پاکستان جاو۔

سوشل میڈیا پر بھارتی شہریوں نے مودی سرکار کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے سوال کیا ہے کہ کیا یہی ہے مودی سرکار کے بھارت کا اصل چہرہ؟ بھارتی میڈیا کے مطابق انتہاپسندوں نے گلی میں کرکٹ کھیلنے پر تکرار پر گھر میں گھس کر توڑ پھوڑ کی۔

اہل خانہ کو تشدد کا نشانہ بنایا۔ لاٹھیوں ہاکیوں لوہے کے ڈنڈوں اور پائپوں سے مارا۔ تشدد سے اہل خانہ میں سے ایک شخص بے ہوش ہو گیا۔ اہل خانہ کا کہنا ہے کہ پولیس کو بار بار اطلاع دی لیکن بروقت کارروائی نہیں کی گئی۔

مسلمان شہری محمد ساجد کا کہنا ہے کہ کچھ لوگ ان سے زبردستی مکان خالی کروانا چاہتے تھے تاکہ وہ خالی گھر پر قابض ہو جائیں۔ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد پولیس ایکشن لینے پر مجبور ہوئی اور ایف آئی آر درج کرکے 6 حملہ آوروں کو گرفتار کر لیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *